Subscribe:

Saturday, April 9, 2011

ہندوستانی مجاہدین


عرفان بھائی السلام علیکم
میں نارتھ انڈیا سے تعلق رکھتا ہوں اور میں جہاد کے لیے فارن کنٹری جانا چاہتا ہوں لیکن امی اجازت نہیں دیتیں کہتی ہیں کہ میں تمہیں معاف نہیں کروں گی ؟ کیا میں غزوہ ہند کا انتظار کروں بھارت میں ؟

وعلیکم السلام ورحمۃ اللہ وبرکاتہ

جب جہاد فرض عین ہو تو اس کے لیے والدین کی اجازت ضروری نہیں ہوتی ۔۔۔ آگے آپ کی مرضی ہے ۔۔۔ بہتر ہے کہ آپ جہاد کی فرضیت کے حوالے سے کتابوں کا مطالعہ کریں اور اپنی والدہ کو بھی کتاب پڑھائیں ۔۔۔ اگر اللہ نے چاہا تو ان کی سمجھ میں آجائے گا ۔۔۔۔ اپنی والدہ کو بتائیں کہ ہماری امت میں اب بھی ایسی مائیں موجود ہیں جو ہمیں درخواستیں بھجواتی ہیں کہ میرا بیٹا بڑا ہوگیا ہے پلیز آپ لوگ اس  کو بھی اپنے ساتھ محاذ پر لے جاؤ ۔۔۔ اگر ہم منع کرتے ہیں تو اصرار کرتی ہیں ۔۔۔ شہید ہو جائے تو آنسو نہیں بہاتیں بلکہ فخر کرتی ہیں ۔۔۔ الحمدللہ ۔۔۔۔ ہمیں ایسی ہی عظیم ماؤں کی ضرورت ہے ۔۔۔ ایسی ہی ماؤں کی موجودگی سے جہاد زندہ ہے ۔۔۔۔  چند دن پہلے ہی مجھے کسی کے والدین کی طرف سے درخواست ملی تھی کہ ہمارے سترہ سالہ بیٹے کو جہاد پر بھجوا دیں ۔۔۔۔ اسی چیز سے تو دشمن خوف کھاتا ہے ۔۔۔  ایک  ہندوستانی بھائی کی ای میل کے بعد سے میں آپ کے لیے ہندوستان کی خفیہ ایجنسیوں کی طرف سے فکر مند ہوں  ۔۔۔۔ اللہ تعالیٰ آپ کی اور  دنیا بھر کے مجاہدین کی حفاظت کرے ۔۔۔۔  آمین ۔۔۔

------------
ایک اور ہندوستانی بھائی کو جواب

آپ نے بتایا ہے کہ آپ بڑی مشکل میں ہیں ۔۔۔ ہندوستانی حکومت اور خفیہ ایجنسیاں آپ لوگوں کو تنگ کر رہی ہیں ۔۔۔
میں پوری کوشش کروں گا کہ آپ کو دعاؤں میں یاد رکھوں ۔۔۔ دیگر مجاہد بھائیوں سے بھی آپ کے لیے دعا کی درخواست کرتا ہوں ۔۔۔۔ بے شک دعاؤں میں اثر ہے ۔۔۔
میں کوشش کروں گا کہ آپ کا رابطہ جلد از جلد ہندوستان میں ہمارے مجاہد بھائیوں سے ہو جائے
ہندوستانی مجاہد بھائیوں کی مدد کے لیے میں نے تین روز قبل مجاہدین کو درخواست بھجوا دی ہے
یہ بات آپ کے ذہن میں رہے کہ پاکستانی مجاہدین بھی ان خطرات میں ہوتے ہیں اور امنیات کی وجہ سے ہمارے آپس کے رابطہ اتنے تیز رفتار نہیں ہیں ۔۔۔ یہ مجھے بھی معلوم نہیں کہ ذمہ داران تک یہ درخواست کب تک پہنچ سکے گی
اس دوران میں کوشش کر رہا ہوں کہ کوئی با اعتماد ڈیٹا انکریپشن سوفٹ وئیر حاصل کر لوں
اس کی ایک پبلک کی میں آپ کو بھیجوں گا اور دوسری آپ مجھ کو بھیجیں گے ۔۔۔ تاکہ کفار و مرتدین ہماری درمیان ہونے والی گفتگو تک نہ پہنچ سکیں ۔۔۔  اس کے بعد ہمارے مجاہد ساتھی آپ تک پہنچنے کی کوشش کریں گے ۔۔۔ لیکن ہم اپنے مجاہد ساتھیوں کے بے نقاب نہیں کرتے ۔۔۔۔ اس رابطہ کے لیے آپ کو یہ خطرہ لینا ہوگا کہ اپنے بارے میں ہندوستانی مجاہدین کو معلومات فراہم کریں  تاکہ وہ آپ کے بارے میں معلومات کروا کر اطمنان کر لیں ۔۔۔۔ یہ تمام کام سست روی سے ہوتے ہیں جلد بازی میں نہیں ہوتے ۔۔۔۔ اگر آپ کے پاس کوئی اور تیز رفتار ذریعہ ہے تو آپ اپنی کوشش بھی جاری رکھ سکتے ہیں ۔۔۔۔
امید ہے کہ تین سے چار دن میں فائل انکرپشن کی معلومات بلاگ پر پوسٹ کرسکوں گا ۔۔۔ انشاء اللہ
جب آپ نے ای میل دوسرے بھائی کو بھیج دی تھی تو مجھے بھی اسی ای میل پر کاپی بھیجنے کی کیا ضرورت تھی
مجھے اس ای میل پر آپ صرف یہ خبر کیا کریں کہ ۔۔۔ میں اپنے ساتھی سے کہوں کہ وہ ای میل چیک کر لیں ۔۔۔
آپ میری عرفان بلوچ والی آئی ڈی سے دور دور رہیں ۔۔۔ یہ خطرے سے خالی نہیں ہے ۔۔۔
آخر میں آپ نے انٹرنیٹ کو احتیاط سے استعمال کرنے کا طریقہ پوچھا ہے ۔۔۔۔اس موضوع پر میری تمام پوسٹ دیکھ لیں اس کے لیے عنوانات کی فہرست میں "تکنیکی معاونت " پر کلک کریں

والسلام
------------
تبصرہ نگار بہن کی خدمت میں

وعلیکم السلام ورحمۃ اللہ وبرکاتہ
آپ نے لکھا تھا کہ طالبان کی حکومت اور اسلامی حکومت میں کوئی فرق ہے ، اگر ہے تو بیان کریں ؟؟؟؟
اصولی طور پر آپ کا سوال غلط تھا ۔۔ وہ اس طرح ہونا چاہیے تھا ۔۔ کیا طالبان کی حکومت اسلامی حکومت تھی ۔۔۔ اس کے بعد متصلا دوسرا سوال ہو سکتا تھا کہ اگر اسلامی حکومت تھی تو کیا طالبان کے دور امارت میں ان سے کوئی غیر اسلامی عمل بھی سرزد ہوا؟؟؟؟
مجھے معلوم ہے کہ آپ طالبان کی ہمدرد ہیں ۔۔۔ لیکن مجھے آپ کا سوال پسند نہیں آیا تھا اس لیے اس کا ایسا روکھا سا جواب دیا تھا ۔۔۔ آپ کے الفاظ کچھ اسی انداز کے تھے جیسے چیلنج کیا جارہا ہو ۔۔۔ بہر حال آپ کی دل آزاری ہوئی تو معافی چاہتا ہوں ۔۔۔۔
مجھے یہ سوال سخت ناپسند ہے ۔۔۔ کیونکہ یہ بات عقل میں نہیں سماتی کہ ہم کیسے ان کی غلطیاں تلاش کریں جو پہلے ہی جھوٹے پروپگینڈے اور بے ہودہ الزامات کی زد میں ہیں ۔۔۔ جب کہ وہ اس امت کے محسنین ہیں ، اور ہمارے محبوب مجاہد ساتھی  بھی ۔۔۔۔
امید ہے اب آپ کی تشفی ہوگئی ہوگی  ۔۔۔۔ مجھےمجاہدین  طالبان سے محبت ہے اس کو نہ آزمائیں ۔۔۔۔

0 تبصرے:

تبصرہ کریں

آپ کے مفید مشوروں اور تجاویز کی ضرورت ہے
آپ اپنی شکایات سے بھی آگاہ کر سکتے ہیں
بحثوں میں مخالفت بھی کر سکتے ہیں لیکن حدود و قیود کے ساتھ
جزاک اللہ